پاکستان سعودی عرب کو نئی شکل میں امداد کیلئے درخواست کریگا،ذرائع

پاکستان سعودی عرب کو نئی شکل میں امداد کیلئے درخواست کریگا،ذرائعsaoodia-pak

اسلام آباد: پاکستان سعودی عرب کو تیل اور نئی شکل میں امداد کیلئے درخواست کرے گا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ سعودی امداد کی بنیاد پر آئی ایم ایف سے قرضے کے حجم اور شرائط کے حوالے سے حتمی فیصلہ کیا جائے گا۔ آج نیوز کے ذرائع کے مطابق تیل کی گرتی ہوئی قیمتوں کے باعث پاکستان سعودی عرب سے تیل کے علاوہ نرم شرائط پر قرضے اور مزید شعبوں میں سرمایہ کاری کی درخواست کرے گا۔ مشیر خزانہ شوکت ترین سعودی حکام کو پاکستان کی معاشی مشکلات کے بارے میں تفصیلات سے آگاہ کریں گے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ سعودی عرب کو پاکستان میں سرمایہ کاری کے تحفظ اور ملکی اقتصادی انتظام میں بہتری کی یقین دہانی کروائی جائے گی۔

سعودی عرب کے سامبا بینک کی شاخیں پاکستان میں کھولنے، زراعت کے شعبے خصوصاً کھاد کے شعبے میں تعاون سمیت دیگر شعبوں میں سرمایہ کاری پر بھی بات چیت ہو گی۔ پاکستان کو سعودی عرب سے اب پینسٹھ ڈالر فی بیرل پر کل سالانہ دو ارب ڈالر کے قریب کی سہولت ملنے کی توقع ہے۔ مشیر خزانہ سعودی عرب سے واپسی پر آئی ایم ایف سے قرضہ حاصل کرنے کے لئے حتمی شکل دیں گے جس میں شرح سود بڑھانے کی شرائط خاص طور پر بڑا مسئلہ ہو گا۔

Advertisements

میزائل حملے ،پاکستان کی تنقید پر توجہ دیں گے، امریکا

میزائل حملے ،پاکستان کی تنقید پر توجہ دیں گے، امریکا
اسلام آباد: امریکی سینٹرل کمانڈ کے سربراہ جنرل ڈیوڈ پیٹریاس نے کہا ہے کہ امریکا میزائل حملوں پر پاکستان کی بڑھتی ہوئی تنقید پر توجہ دے گا۔ جنرل ڈیوڈ پیٹریاس نے سی این این سے انٹرویو میں کہا کہ امریکا سرحدی علاقوں پر میزائل حملوں کی وجہ سے پاکستان کی بڑھتی ہوئی تنقید پر توجہ دے گا۔ جنرل ڈیوڈ پیٹریاس کا کہنا تھا کہ پاکستانی قیادت کو قبائلی علاقوں میں موجود انتہا پسندوں سے لاحق خطرات کا علم ہے اور پاکستانی حکومت اس سے نمٹنے کے لئے سنجیدہ ہے۔

ہنگو:سیکیورٹی فورسز کی چیک پوسٹ پر خودکش حملہ،7افرادہلاک

ہنگو:سیکیورٹی فورسز کی چیک پوسٹ پر خودکش حملہ،7افرادہلاکhangu

پشاور……..ہنگو کے کے علاقے دو آبہ میں سیکیورٹی فوسز کی چیک پوسٹ پر خود کش حملہ میں3سیکیورتی اہلکاروں سمیت7افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔ذرائع کے مطابق منگل کی صبح دو آبہ میں سور پل کے قریب سیکیورٹی فورسز کی چیک پوسٹ کو خود کش حملہ آور نے نشانہ بنایا جس میں ابتدائی طور پر3سیکیورٹی اہلکاروں سمیت7افراد ہلاک جبکہ4 زخمی ہوگئے ہیں ،جبکہ ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ بھی ظاہر کیا جارہا ہے۔دھماکے کے بعد سیکیورٹی فورسز نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا ہے اور امدادی کارروائیاں جاری ہیں۔دھماکے کے بعد علاقے میں سیکیورٹی سخت اور ایمرجنسی نافذکردی گئی ہے۔

afg:افغانستان کے ڈپٹی انٹیلی جنس چیف کو قتل کردیاگیا

قندھار…………افغانستان کے ڈپٹی انٹیلی جنس چیف کو فائرنگ کرکے قتل کردیا گیا ہے۔غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق قندھار میں نا معلوم موٹر سائیکل سواروں نے فائرنگ کرکے افغانستان کے ڈپٹی انٹیلی جنس چیف عزیزاللہ کو قتل کردیا ۔صوبائی انٹیلی جنس ا دارے کے سربراہ عبدالقیوم کٹوازی کے مطابق عزیز اللہ گھرجارہے تھے کہ تاک میں بیٹھے نامعلوم موٹرسائیکل سواروں نے ان پر فائرنگ کردی جس کے نتیجے میں وہ موقع پر جاں بحق ہو گئے۔اس واقعے کی ذمہ داری ابھی تک کسی نے قبول نہیں کی جبکہ حکومت نے طالبان کے ملوث ہونے کے خدشات کا اظہار کیا ہے

حریت لیڈروں کی گرفتاری کی مذمت

حریت لیڈروں کی گرفتاری کی مذمت

سرینگر//لشکر طیبہ کے ترجمان اعلیٰ نے اقوام متحدہ کے جنرل سیکریٹری بانکی مون کے کشمیر کے حوالے سے دئے گئے بیان کا خیر مقدم کیا ہے ۔انہوں نے حریت کانفرنس کے لیڈروں کر گرفتار کر نے اور انہیں پبلک سیفٹی ایکٹ لگانے کی مذمت کرتے ہوئے لوگوں سے اپیل کی ہے کہ وہ ہر حال میںانتخابات سے دور رہیں۔اپنے ایک ٹیلی بیان میں انہوں نے لوگوں سے اپیل کی کہ وہ کارڈی نیشن کمیٹی کے پروگراموں پر عمل کرتے ہوئے 6نومبر کو جامع مسجد چلو کے پروگرام کو کامیاب بنائیں۔انہوں نے کہا کہ کشمیر مسئلہ کو حل کر انے میں یواین او کا ایک اہم رول ہے اور یواین او کو یہ مسئلہ حل کر نے کی سعی کر نی چاہیے۔انہوں نے کہا”کشمیر مسئلہ کو حل کرنا اقوام متحدہ کی ذمہ داری ہے اور ہم اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل بان کی مون کے مسئلہ کشمیر کے حوالے سے دئے گئے بیان کا خیر مقدم کرتے ہیں“۔انہوں نے کہا کہ یواین او سیکریٹری جنرل بان کی مون ذاتی طور پر کشمیر کا دورہ کرکے حالات کا جائزہ لیں۔انہوں نے کہا”کشمیر میں آزادی کی تحریک عوامی تحریک ہے اور بان مون کشمیر میں آکر خود دیکھ لیں“۔انہوں نے لوگوں سے کہا کہ وہ اسمبلی انتخابات کا مکمل بائیکاٹ کریں اور ان انتخابات کے خلاف احتجاج کریں۔انہوں نے اپنے بیان میں کشمیر کی آزادی کے لئے جان نچھاور کر نے والوں کو خراج عقیدت پیش کیا۔انہوں نے کہا”کشمیر یوں نے آج تک بیش بہا قربانیاں دیں ہیں یہ قربانیاں کبھی بھی رائیگاں نہیں ہونگی اس لئے لوگ آزادی کی تحریک کو پایہ تکمیل تک پہنچانے کے لئے کوششیں جاری رکھیں۔

بھارت انقلاب کا رخ نہیں بدل سکتا ہے

سرینگر// حریت کانفرنس(ع) کے چیرمین میر واعظ محمد عمر فاروق نے مزاحمتی تحریک کے سرکردہ قائدین کی گرفتاری اور انہیںپبلک سیفٹی ایکٹ کے تحت نظر بند کر نے کی کارروائی کو انتخابات کو کامیاب بنانے کے لئے راہ ہموار کر نے کی ایک کوشش قرار دیاہے۔ اخبارات کے نام جاری بیان میں انہوں نے کہا ہے کہ اگر بھارت یہ سمجھتاہے کہ اس عمل سے رواں تحریک حریت اور عوامی انقلاب کا رخ بدل سکتا ہے تو اسے تاریخ کے اوران دیکھنے چاہئے کہ کشمیر کی تحریک پچھلے 60برسوں سے رواں دواں ہے۔حریت چیرمین نے محمد یاسین ملک،مولانا شوکت احمد شاہ،غلام نبی سمجھی اورغلام محمد سوپوری کو پی ایس اے کے تحت نظر بند کرنے اور انہیںجموں جیل منتقل کرنے کی کارروائی کو افسوناک قرار دیا ہے۔

اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل کے بیان پر میر واعظ کا اظہار اطمینان بانکی مون کا بیان عالمی ادارہ کی بے بسی کا عکاس: تحریک حریت

اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل کے بیان پر میر واعظ کا اظہار اطمینان
بانکی مون کا بیان عالمی ادارہ کی بے بسی کا عکاس: تحریک حریت
حریت کانفرنس (ع) کے چیرمین میر واعظ عمر فاروق نے اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل بانکی مون کے بیان کا خیر مقدم کیا ہے جبکہ تحریک حریت نے اس بیان جموں کشمیر کے عوام کے جذبات کو ٹھیس پہنچانے کے مترادف قرار دیا ہے۔حریت چیرمین میر واعظ عمر فاروق نے کے این ایس کو بتایا کہ ہم پہلے سے ہی کہتے آئے ہیں کہ مسئلہ کشمیر حل طلب ہے اور یہ اقوام متحدہ کی قرار دادوں کے عین مطابق اور کشمیر عوام کی امنگوں کے مطابق حل کیا جانا چاہئے جبکہ یہ اقوام متحدہ کے چارٹر پر بھی موجود ہے۔انہوںنے اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل بانکی مون کے بیان کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا کہ سیکریٹری جنرل مسئلہ کشمیر کی اہمیت کو سمجھتے ہوئے یہ بیان دیا ہے اور انہوںنے بھی مسئلہ کشمیر کو بات چیت کے ذریعے حل کرنے کی بات کی ہے۔میر واعظ عمر فاروق نے کہا کہ بانکی مون نے اپنے بیان میں دونوں ملکوں پر زور دیا ہے کہ وہ باہمی گفت و شنید کے اس دیرینہ مسئلے کا حل تلاش کریں ۔اس دوران تحریک حریت کے ترجمان نے اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل بانکی مون کے بیان کو مسترد کر دیا ہے۔ترجمان نے کہا کہ اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل بانکی مون نے اس طرح کا بیان دیکر جموں کشمیر کے عوام کے جذبات کو ٹھیس پہنچائی ہے اور ساتھ ہی اس نے اقوام متحدہ کی بے بسی کی تصدیق کی ہے۔ان کا کہنا تھا کہ سیکریٹری جنرل کو جموں کشمیر کی زمینی صورتحال کا جائزہ لینا چاہئے تھا کہ کس طرح یہاں کے لوگوں کو ظلم و ستم کا شکار بنایا جا رہا ہے،انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں کی جا رہی ہیں،عصمتیں لوٹی جا رہی ہیںاور آزادی پسند لیڈروں کو جیلوں میں بند کیا جا رہا ہے۔انہوںنے کہا کہ سیکریٹری جنرل کو اس بات کا نوٹس لینا چاہئے تھا کہ کس طرح یہاں کے لوگ لاکھوں کی تعداد میں بھارت مخالف مظاہروں میں شامل ہو کر اپنے پیدائشی حق ”حق خود ارادیت“کے مطالبے کو لیکر سڑکوں پر نکل رہے ہیں